نقل سے بچنے کے لیے انڈویئر میں ٹیسٹ

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption امیدواروں کی جسمانی تلاشی پر وقت صرف کرنے کی بجائے یہ طریقہ اختیار کیاگیا: فوجی اہلکار

بھارتی ریاست بہار میں فوج میں بھرتی کے لیے ہونے والے ٹیسٹ میں نقل سے بچاؤ کےلیےامیدوراوں کو صرف انڈویئر پہن کی ٹیسٹ دینے پر مجبور کیاگیا۔

ریاست بہار کے قصبے مظفرپور فوجی بھرتی کےلیے ٹیسٹ لینے پر معمور فوجی اہلکار نے کہا ہے کہ نقل کے امکانات کو ختم کرنے اور بڑی تعداد میں امیدواروں کی جسمانی تلاشی پر وقت ضائع کرنے کی وجہ سے یہ طریقہ اختیار کیا گیا ہے۔

فوج میں بھرتی کے سینکڑوں خواہشمند جب ٹیسٹ دینے کے لیے مقررہ مقام پر پہنچے تو انھیں ہدایت کی گئی کہ وہ اپنے جسم پر صرف انڈویئر رہنے دیں اور باقی تمام لباس اتار دیں۔

تصاویر میں دیکھا جاسکتا ہے کہ سینکڑوں امیدوار کھلے میدان میں زمین پر التی پالتی مار کر بیٹھے ہوئے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption بہار سمیت بھارت کی کئی ریاستیں امتحانوں میں نقل کے لیے مشہور ہیں

ایک امیدوار نے انڈین ایکسپریں کو بتایا کہ انھیں محسوس کیا کہ ٹیسٹ کا یہ طریقہ وقار کے منافی ہے لیکن ان کے پاس اور چارہ ہی نہ تھا۔

حکام کے مطابق فوج میں بھرتی کے لیے 1159 امیدواروں نے اتوار کے روز مظفر پور کے کھلے میدان میں ایک گھنٹے کے ٹیسٹ میں شرکت کی۔

ایک امیدوار نے انڈین ایکسپریس کو بتایا ’جوں ہی ہم چکر میدان میں داخل ہوئے ہمیں کہا گیا کہ انڈرویئر کے علاوہ تمام لباس اتار دو۔ ہمیں بڑا عجیب لگا لیکن ہمارے پاس اس حکم کو ماننے کے علاوہ کوئی چارہ ہی نہیں تھا۔‘

انھوں نے کہا کہ تمام امیدواروں کے درمیان تمام سمتوں سے آٹھ فٹ کا فاصلہ تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption بہار کی حکومت نے امتحانوں میں نقل کے رجحان کو روکنے کے لیے کئی اقدامات متعارف کروائے ہیں

انڈین ایکسپریس نے فوج کے ایک سینئیر اہلکار کے حوالے سے لکھا ہے کہ امیدواروں کے کپڑے اتاروانے کا فیصلہ ’انتظامی کوتاہی‘ تھی۔

ریاست بہار سمیت بھارت کی کئی ریاستیں امتحانوں میں نقل کے لیے بدنام ہیں۔ پچھلے برس بہار کی ریاستی حکومت کو اس وقت شدید شرمندگی کا سامنا کرنا پڑا تھا جب ایک امتحان کے دوران والدین اور دوستوں کو کمراامتحان میں نقل پہچنانے کے لیے کھڑکیوں سے لکٹتے ہوئے تصاویر سامنے آئی تھیں۔

جنوری میں ریاستی حکومت نے نقل سے بچاؤ کے لیے سخت اقدامات کا اعلان کیا تھا۔

اسی بارے میں