’ریپ‘ کا شکار ہونے والی لڑکی ہسپتال میں چل بسی

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption بھارت میں خواتین سے جنسی زیادتی کے خلاف مسلسل آواز اٹھائی جاتی رہی ہے

بھارت کے دارالحکومت دہلی کے نواحی علاقے گریٹر نوئیڈا میں مبینہ جنسی زیادتی کے بعد جلا دی جانے والی لڑکی زخموں کی تاب نہ لا کر چل بسی ہے۔

ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ جب اس 15 سالہ لڑکی کو منگل کو ہسپتال لایا گیا تو اس کا 95 فیصد جسم جل چکا تھا۔

یہ واقعہ تگری نامی گاؤں میں پیش آیا تھا اور پولیس نے ریپ اور اقدامِ قتل کی دفعات کے تحت مقدمہ درج کر کے ایک شخص کو گرفتار کیا ہے۔

دہلی پولیس کے ایک اعلیٰ اہلکار راکیش یادیو نے بی بی سی ہندی سروس سے بات کرتے ہوئے ملزم کی شناخت اجے شرما کے طور پر کی۔

انھوں نے بتایا کہ اجے شرما نے لڑکی کو اپنے گھر کے ٹیرس پر ملنے کو کہا، جہاں اسے ریپ کرنے کے بعد اسے جلا کر ہلاک کر دینے کی کوشش کی۔

جس گاؤں میں یہ واردات پیش آئی، وہاں عوامی غم و غصے کے مد نظر سکیورٹی کو انتہائی سخت کر دیا گیا تھا۔

دہلی پولیس کا کہنا ہے کہ یہ معاملہ ’عشق کی تکون‘ کا لگتا ہے اور اس سلسلے میں مزید تفتیش کی جا رہی ہے۔

اسی بارے میں