چینی فوج کی ایکشن سے بھرپور ریکروٹمنٹ ویڈیو

تصویر کے کاپی رائٹ Other

کیا تم خوفزدہ ہو؟ نہیں! کیا تم خوفزدہ ہو؟ نہیں! صرف مارنے کا حکم چاہیے!

یہ چین کی پیپلز لبریشن آرمی کی نئی ریکروٹمنٹ ویڈیو پر گانے کی چند سطریں ہیں۔

اس تیز ویڈیو اور ریپ سٹائل کی موسیقی کے ساتھ چینی فوج نوجوانوں کو فوج میں بھرتی ہونے کی ترغیب دے رہی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Other

یہ سطریں اس ویڈیو میں سکرین پر آتی ہیں: ’ہمیشہ مشن کے بارے میں سوچنا اور ہمیشہ آنکھیں دشمنوں پر رکھنا۔‘

اور پھر ایک سوال کیا جاتا ہے ’جنگ کسی بھی وقت ہو سکتی ہے۔ کیا تم تیار ہو؟‘

یہ ویڈیو چینی عوام کی نظروں میں اپنی مقبولیت میں اضافہ کرنے کی کوشش ہے۔ حال ہی میں چین نے اعلیٰ کوالٹی کی ویڈیوز جاری کی ہیں جو امریکی فلم ٹاپ گن کی طرز پر بنائی گئی ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Other

لیکن اس تازہ ویڈیو میں پیپلز لبریشن آرمی کو شاندار طریقے سے پیش کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔

ویڈیو میں کئی عمدہ تصاویر ہیں جیسے کہ جدید ٹیکنالوجی، خطرناک فوجی بننے کا موقع، سنائیپر بمقابلہ دہشت گرد، حب الوطن بمقابلہ چین کے دشمن، ٹینک، کنگ فو، بندوقیں اور جیٹ۔

تصویر کے کاپی رائٹ Other

اس ویڈیو میں ایک نوجوان یرغمال لڑکی کو بھی بچاتے ہوے دیکھایا گیا ہے۔ اور یہ اس ویڈیو میں نظر آنے والی واحد خاتون ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Other

خطے میں دیگر ممالک یہ ویڈیو دیکھ کر شاید معمولی سے خوفزدہ ہوں لیکن یہ ویڈیو ان کے لیے نہیں ہے۔

اس ویڈیو سے ظاہر ہے کہ فلم بنانے والوں کو اس بات کی کوئی فکر نہیں کہ کچھ لوگوں کو یہ ویڈیو پسند نہ آئے۔ ان کا ایک ہی مقصد ہے اور وہ ہے نوجوانوں کی بھرتی۔

سائیبر سپیس میں اس ویڈیو پر کیا ردعمل ہے؟

چین کی مقبول سوشل میڈیا سائٹس پر اس ویڈیو پر ردعمل ملا جلا رہا ہے لیکن واضح حمایت کو ڈھونڈنا پڑتا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Other

جیسے ایک کمنٹ میں کہا گیا ہے ’یہ پرومو بہت عمدہ ہے‘ اور ’بہت اچھی اور پرجوش تصاویر ہیں‘۔

لیکن کئی چینی اس ویڈیو کا مذاق اڑا رہے ہیں۔ ایک نے پوچھا: ’اس پر کتنا خرچہ آیا؟‘ ایک اور نے لکھا ’اس کا کوئی مرکزی خیال نہیں ہے اور ریپ میوزک سے کوئی فائدہ نہیں ہوا۔‘

کچھ تبصروں میں پیپلز لبریشن آرمی کا کھلم کھلا مذاق اڑایا گیا ہے۔ ایک نے لکھا ’میرے قصبے میں وہ بچے فوج میں جاتے ہیں جو فیل ہو جاتے ہیں اور ٹیم کا لیڈر بنانے کے لیے رشوت دینی لازمی ہے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Other

اس قسم کے تبصروں کے باعث کسی نے لکھا ’مجھے اطمینان ہوا ہے کہ چینی عوام کو برین واش کرنا اتنا آسان نہیں ہے جتنا پہلے ہوتا تھا۔ لیکن شاید یہ لوگ ایسے ہیں ہی نہیں جو فوج میں بھرتی ہوں۔‘

اسی بارے میں