نیپال کے آخری خانہ بدوش

تصویر کے کاپی رائٹ Andrew Newey

راؤتے نیپال کا آخری خانہ بدوش قبیلہ ہے اور اب اس کے ارکان تعداد کم ہو کر ڈیڑھ سو رہ گئی ہے۔

یہ قبیلہ اچھم کے درمیانی پہاڑوں میں رہتا ہے جہاں فوٹوگرافر اینڈریو نیوی نے ان کی تصاویر لی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Andrew Newey

اس قبیلے کے افراد گاؤں سے دور جنگلوں میں عارضی خیموں میں رہتے ہیں۔ ان کے خیمے لکڑیوں سے بنائے گئے ہیں جو پتوں اور کپڑوں سے ڈھکے گئے ہیں۔

یہ شکاری لوگ ہر چند ہفتوں کے بعد جنگل میں اپنے خیموں کی جگہ بدلتے ہیں اور ایک جگہ سے دوسری جگہ منتقل ہوتے رہتے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Andrew Newey

راؤتے قبیلے کا ایک شخص بندر کا شکار کر کے کامیابی سے لوٹ رہا ہے۔ یہ بندروں کا شکار کرنے میں ماہر ہیں اور وہ انھیں مخصوص جال کے ذریعے پکڑتے ہیں اور شکار صرف قبیلے کے مرد ہی کرتے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Andrew Newey

محنت کی تقسیم جنس پر مبنی ہے۔ خواتین عام طور پر روزانہ کے کام کرتی ہیں جن میں کھانا پکانا، کپڑے دھونا، پانی لانا، لکڑیاں جمع کرنا اور اناج پیسنا شامل ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Andrew Newey

راؤتے قبیلے کے خیمے کا ایک مخصوص منظر جہاں ایک کنبے کے سارے افراد آگ کے گرد یکجا ہیں۔ نیپالی حکومت کی جانب سے بسائے جانے کی تمام کوششوں کے باوجود یہ پوشیدہ رہتے ہیں اور دوسرے لوگوں کے بارے میں مشکوک۔

تصویر کے کاپی رائٹ Andrew Newey

جنگلی پتوں کو ایک برتن میں ابالا جا رہا ہے۔ راؤتے کو جنگل سے بہت لگاؤ ہے وہ کاشتک اری کے خلاف ہیں کیونکہ ان مطابق بیج بونا گناہ ہے۔ پہلے جنگل سے ان کی ضرورتیں پوری ہو جاتی تھیں لیکن اب ان کا گزر بسر حکومت کی امداد پر ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Andrew Newey

راؤتے قبیلے کی بچایاں موسل سے اناج کوٹ رہی ہیں جبکہ بچے صفائی کے کام میں مشغول ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Andrew Newey

یہ لوگ نیپال کے درمیانی جنگل میں رہتے ہیں جو ترائی کے علاقے اور ہمالیہ درمیان کا علاقہ ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Andrew Newey

دو دنوں میں ریچھوں کے دو حملوں میں قبیلے کا ایک شخص ہلاک اور ایک شخص زخمی ہوگیا اس کے بعد سے بچوں کو جنگل میں دور تک جانے سے روک دیا گيا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Andrew Newey

اس علاقے سے جنگل بہت کم ہو گئے ہیں اور باقی حصوں کو حکومت کے قانون کے تحت تحفظ فراہم کیا گیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Andrew Newey

ساری تصاویر فوٹوگرافر اینڈریو نیوی نے لی ہیں

اسی بارے میں