چینی لڑکا دبئی کیوں جانا چاہتا تھا؟

تصویر کے کاپی رائٹ Getty

ایک چینی لڑکے کے جہاز پر چھپ کر دبئی پہنچنے کے واقعے کے بعد چین میں اس معاملے پر سماجی بحث شروع ہو گئی ہے۔

اطلاعات کے مطابق اس کا مقصد وہاں بھیک مانگ کر پیسے کمانا تھا۔

اس 16 چینی لڑکے کا نام شو ہے اور اس کا تعلق سچوان صوبے سے ہے۔ وہ 27 مئی کو شنگھائی سے دبئی جانے والی پرواز میں چھپ کر سوار ہو گیا تھا۔

چینی لڑکا جہاز میں چھپ کر دبئی پہنچ گیا

سرکاری خبررساں ادارے شن ہوا کے مطابق لڑکے نے کہا کہ اس نے سنا تھا کہ دبئی میں گداگر ماہانہ 71 ہزار ڈالر کما لیتے ہیں۔

اس سے قبل ٹوئٹر سے ملتی جلتی چینی ویب سائٹ سینا ویبو پر آنے والے ایک خبر میں یہ ہیش ٹیگ استعمال کیا گیا تھا: #DubaiBeggarsMake470000YuanMonthly

منگل کو شو کے بارے میں خبر آنے کے بعد یہ ہیش ٹیگ دوبارہ ٹرینڈ کر رہا ہے، اور بعض لوگوں نے اس پر حیرت کا اظہار کیا ہے جب کہ دوسرے اس پر تنقید کر رہے ہیں۔

چی ما شیاؤ نے لکھا: ’وہ لوگ جو خواب دیکھتے ہیں ان کی تعریف کی جانی چاہیے۔‘

تاہم کائی گے لو نے ویبو پر لکھا: ’کیا اس لڑکے کی حمایت کرنے والے لوگ سنجیدہ ہیں؟ ہر کوئی جانتا ہے کہ وہ غیرقانونی طریقے سے ایک ملک میں داخل ہونا چاہتا تھا۔

’اس کے علاوہ یہ لڑکا بغیر محنت کیے بھیک مانگ کر پیسے کمانا چاہتا تھا۔‘

بعض صارفین نے میڈیا پر الزام لگایا ہے کہ وہ دبئی کی دولت کے بارے میں افواہیں پھیلا رہا ہے۔

سی سی ٹی وی نے ویبو پر تبصرہ کیا: ’میڈیا غلط اطلاعات نشر کر رہا ہے اور اسے اس بات کی ذمہ داری قبول کرنی چاہیے۔‘

بی بی سی چائنیز نے شنگھائی سے دبئی جانے والے دو مسافروں سے بات کی جن کا کہنا تھا کہ میڈیا کی رپورٹوں نے لڑکے کو گمراہ کیا۔

چائنا ڈیلی اخبار نے گلف نیوز کی ایک خبر شائع تھی جس کے مطابق پولیس نے ایک دبئی میں گداگر کو گرفتار کیا جس نے کہا کہ وہ دو لاکھ 70 ہزار درہم ماہانہ کماتا ہے۔

دبئی پولیس گداگروں کی پکڑ دھکڑ کرتی ہے اور اس گداگر کو اسی مہم کے تحت گرفتار کیا گیا تھا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ وہ ’پیشہ ور‘ بھکاریوں کو پکڑ رہی ہے، جن میں سے بعض سیاحتی یا کاروباری پاسپورٹ پر دبئی آئے ہوئے ہیں۔ تاہم اس نے یہ نہیں کہا کہ گرفتار شدہ 59 بھکاریوں سے کتنی رقم برآمد ہوئی تھی۔

اسی بارے میں