’کشمیر میں بھارت نواز پارٹیوں کو ووٹ دینا حرام‘

تصویر کے کاپی رائٹ Bilal Bahadur
Image caption گیلانی نے تمام ہند نواز پارٹیوں کی مخالفت کرتے ہوئے لوگوں کو ووٹ ڈالنے سے منع کیا

بھارت کے زیر انتظام کشمیر کے اہم حریت لیڈر سید علی شاہ گیلانی نے کہا ہے کہ کشمیر میں بھارت نواز سیاسی جماعتوں کو ووٹ دینا اسلام کے مخالف ہے اور شرعی طور پر بھی حرام ہے۔

گیلانی کی قیادت والے حریت کانفرنس کے گروپ نے سری نگر میں اتوار کو ایک سیمینار منعقد کیا تھا جس سے خطاب کرتے ہوئے سید علی شاہ گیلانی نے یہ بات کہی۔

سید علی شاہ گیلانی نے بھارت نواز سیاسی جماعتوں کو ووٹ نہ دینے کی بات کہتے ہوئے کہا کہ نیشنل کانفرنس، پی ڈی پی، پیپلز کانفرنس، عوامي اتحاد پارٹی اور دوسری جتنی بھی انتخابات لڑنے والی پارٹیاں ہیں وہ سب کشمیر مسئلے کی دشمن ہیں۔

گیلانی نے کہا: یہ سیاسی جماعتیں اس کلہاڑی کے دستے ہیں جو بھارت ہم پر چلا رہا ہے اور شرعی طور پر ایسی جماعتوں کو ووٹ دینا حرام ہے۔

گیلانی نے مزید کہا: ’یہ سیاسی جماعتیں کشمیر میں جاری بھارت کے ظلم اور جبر کا ساتھ دیتی ہیں، اور شراب، نشے اور بے حیائی کو عام کرتی ہیں۔‘

اس وقت کشمیر میں اننت ناگ ضلع کی ایک نشست پر ضمنی انتخابات ہو رہے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption کمشیمری پنڈتوں کی مخصوص علیحدہ کالونی کی بھی مخالفت کی گئی

علیحدگی پسندوں نے لوگوں سے اس انتخاب کا بائیکاٹ کرنے کے لیے کہا ہے۔

کشمیر میں مسلح تحریک شروع ہونے کے بعد سے آج تک جتنے بھی انتخابات کرائے گئے ہیں علیحدگی پسندوں نے ان تمام انتخابات کے خلاف مہم چلائی ہے۔

بھارتی اخبار دا اکانومک ٹائمز کے مطابق حریت کے رہنماؤں سید علی شاہ گیلانی، میر واعظ عمر فاروق اور ديگر نے بالاتفاق رائے فوجیوں اور پنڈتوں کی مخصوص علیحدہ کالونیوں کی تعمیر کے خلاف اپنے موقف کا اعادہ کیا اور کہا کہ وہ وادی میں ایسا نہیں ہونے دیں گے اور سول سوسائٹی کے اراکین سے مل کر وہ کشمیری پنڈتوں سے رابطہ قائم کریں گے۔

یہ کمیٹی پنڈتوں کو یہ باور کرائے گی کہ ’کشمیری ان کی واپسی کے خلاف نہیں ہیں بلکہ پوری وادی میں ان کا بھائیوں اور اچھے پڑوسی کی طرح استقبال ہے اور کوئی بھی انھیں ان کے بھارت نواز موقف کے لیے نقصان نہیں پہنچائے گا۔‘

اسی بارے میں