افغان طالبان نے ہلمند میں 25 مسافر اغوا کر لیے

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption طالبان کے ترجمان قاری یوسف احمدی نے تصدیق کی ہے کہ اس حملے اور اغوا کے پیچھے ان کا ہاتھ ہے

افغانستان سے موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق طالبان نے صوبہ ہرات اور قندھار کے درمیان چلنے والی تین بسوں کو روک کر کم ازکم 25 مسافروں کو اغوا کر لیا ہے۔

افغان طالبان نے اغوا کی اس واردات کی ذمہ داری قبول کی ہے۔

٭ قندوز میں طالبان نے 35 مسافر اغوا کر لیے

یہ واقعہ صوبہ ہلمند کی حدود میں پیش آیا اور مقامی پولیس کا کہنا ہے کہ ان بسوں میں 100 کے قریب افراد موجود تھے۔

پولیس کے مطابق طالبان نے 40 سے زیادہ افراد کو بسوں سے اتارا تاہم پھر 18 بچوں اور خواتین کو چھوڑ کر 25 مردوں کو اپنے ساتھ لے گئے۔

طالبان کے ترجمان قاری یوسف احمدی نے تصدیق کی ہے کہ اس حملے اور اغوا کے پیچھے ان کی تنظیم کا ہاتھ ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ یہ کارروائی تفتیشی آپریشن کا حصہ ہے۔

خیال رہے کہ یہ چند ہفتوں کے دوران طالبان کی جانب سے مسافروں کے اغوا کا دوسرا بڑا واقعہ ہے۔

اس سے قبل 31 مئی کو طالبان نے ملک نے شمالی صوبے قندوز میں کابل سے بدخشاں کی جانب سفر کرنے والی چار بسوں کو روک کر 35 افراد کو اغوا کر لیا تھا۔

افغان حکام نے خدشہ ظاہر کیا تھا کہ ان مغویوں میں سے چند کو ہلاک بھی کر دیا گیا ہے۔

اسی بارے میں