یوگا کو تنازعات سے دور رکھیں: نریندر مودی

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption چنڈی گڑھ میں وزیر اعظم نریندر مودی نے یوگا کے ایک پروگرام میں شرکت کی

انڈیا کے دارالحکومت دہلی سمیت ملک کے مختلف شہروں میں دوسرے بین الاقوامی یومِ یوگا کے تحت اجتماعی یوگا کے پروگرامز منعقد کیے جا رہے ہیں۔

منگل کی صبح چندی گڑھ میں منعقدہ ایک پروگرام میں وزیر اعظم نریندر مودی نے شرکت کی۔

اس موقعے پر خطاب کرتے ہوئے نریندر مودی نے یوگا کو تنازعات سے دور رکھنے پر زور دیا۔

خیال رہے کہ یوگا ورزش کا ایک طریقہ ہے جس میں ہندو مذہب کا رنگ نمایاں ہے اور یہ بہت سے لوگوں کو قابل قبول نہیں۔

بہار کے وزیر اعلی نتیش کمار نے حال ہی میں کہا کہ وزیر اعظم پہلے شراب پر پابندی لگائیں پھر یوگا کی بات کریں۔

جھارکھنڈ ریاست میں انھوں نے کہا: ’یوگا کا پہلا اصول شراب سے دور رہنا ہے۔ لہذا اگر آپ یوگا کو فروغ دینے کے لیے سنجیدہ ہیں تو پہلے شراب پر پابندی لگائیے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption یہ پروگرام دوسرے بین الاقوامی یوگا ڈے کے سلسلے میں منعقد کیا گيا

اينگر یوگا ادارے کے انسٹرکٹر پرشانت اينگر کا کہنا ہے کہ یوگا کو مقبول بنانا درست ہے لیکن اس کی تشہیر کا طریقہ درست نہیں۔

بی بی سی سے بات کرتے ہوئے انھوں نے کہا: ’یوگا کو مقبول بنانے کے لیے حکومتی کوشش درست ہے لیکن اس کا جس طرح پروپیگنڈہ کیا جا رہا ہے، وہ درست نہیں۔ یوگا سیکھنے نہیں بلکہ اپنے اندر ضم کرنے کی چیز ہے۔ عوام کے درمیان یوگا کرنا کھلے حمام میں نہانے جیسا ہے۔‘

انھوں نے مزید کہا: ’بڑے پیمانے پر یوگا کے پروگرام سے لوگوں کو صرف پتہ چلے گا کہ یوگا جیسی کوئی چیز ہے لیکن اس سے یوگا ان کی زندگی کا حصہ نہیں بن سکے گا۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption انڈیا کے مختلف شہروں میں یوگا کے پروگرام منعقد کیے گئے

وزیر اعظم مودی نے یوگا کو تنازعات سے دور رکھنے پر زور دیا۔

انھوں نے کہا ’بھارت میں ذیابیطس کے مریضوں کی تعداد میں اضافہ ہو رہا ہے اور اس سے بچنے کے لیے یوگا کے ذریعے عوام میں ایک تحریک چلانے کی ضرورت ہے۔‘

مودی نے یوگا کے لیے اگلے سال سے دو ایوارڈز دیے جانے کا اعلان کیا۔ ایک بین الاقوامی سطح پر یوگا کے فروغ کے لیے جب کہ دوسرا ملکی سطح پر۔

اسی بارے میں