انڈیا کا زمین سے فضا میں مار کرنے والے میزائل کا تجربہ

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

انڈیا نے جمعرات کو زمین سے فضا میں مار کرنے والے ایک نئے میزائل کا کامیابی کے ساتھ تجربہ کیا ہے۔ یہ میزائل درمیانے فاصلے تک مار کرنے کے لیے استعمال کیا جاسکتا ہے۔

میزائل کو آزمائش کے طور پر اڑیسہ کے ساحل پر واقع چاندی پور انٹیگریٹڈ ٹیسٹ رینج سے داغا گیا۔

سرکاری ذرائع کے مطابق میزائل کا تجربہ کامیاب رہا۔

* بھارت کا اسرائیل کی مدد سے بنائے گئے میزائل کا تجربہ

ماہرین کا کہنا ہے کہ میزائل فوج کو فراہم کیے جانے کے بعد فضائی حملوں کو روکنے کا نظام کافی مضبوط ہو جائے گا۔

انڈیا میں دفاعی تحقیق کے ادارے ڈی آر ڈی او کے مطابق میزائل ان تمام پیمانوں پر پورا اترا جن پر اسے پرکھا گیا۔

ادارے کے مطابق پہلے رڈار کے نظام نے ایک ڈرون کی نشاندہی کی اور پھر اس میزائل نے اپنے ہدف کو تباہ کردیا۔

پہلے یہ آزمائش بدھ کو ہونی تھی لیکن آخری وقت میں اسے جمعرات کے لیے ملتوی کر دیا گیا تھا۔

ماہرین کے مطابق یہ میزائل 70 کلومیٹر کے فاصلے تک اہداف کو تباہ کرنے کے لیے استعمال کیے جاسکتے ہیں۔

انڈیا میں اس میزائل کی یہ پہلی آزمائش تھی۔

بتایا جاتا ہے کہ یہ میزائل سسٹم براک میزائلوں سے ملتا جلتا ہے جو بحریہ پہلے سے استعال کر رہی ہے۔

اسے میزائل سسٹم کہنے کی وجہ یہ ہے کہ اس میں میزائل کے علاوہ رڈار، موبائل لانچر اور بجلی کی سپلائی کا ساز و سامان بھی شامل ہوتا ہے۔

اطلاعات کے مطابق ٹیسٹ رینج کے قریب رہنے والے تقریباً ساڑھے تین ہزار لوگوں کو آزمائش سے پہلے احتیاط کے طور پر محفوظ مقامات پر منتقل کر دیا گیا تھا اور مقامی ماہی گیروں کو بھی سمندر میں نہ جانے کا مشورہ دیا گیا تھا۔

وزیر اعظم نریندر مودی کی حکومت کی کوشش ہے کہ ہتھیار ملک کے اندر ہی تیار کیے جائیں۔

انڈیا کو اسی ہفتے میزائل ٹیکنالوجی کنٹرول کی برآمد پر کنٹرول رکھنے والے ممالک کی رکنیت حاصل ہوئی ہے۔ یہ ان ممالک کا گروپ ہے جو بیلسٹک میزائلوں کے پھیلاؤ کو روکنے کی کوشش کرتے ہیں کیونکہ انھیں وسیع پیمانے پر تباہی برپا کرنے والے ہتھیار داغنے کے لیے استعمال کیا جاسکتا ہے۔

جس میزائل کو جمعرات کو ٹیسٹ کیا گیا ہے وہ اس زمرے میں شامل نہیں ہے۔

اسی بارے میں