انڈیا: سانپ مارنے پر دلت کو مار مار کر ہلاک کردیا

تصویر کے کاپی رائٹ S. Niazi
Image caption قتل کے خلاف ضلع کے کلکٹیریٹ میں دلتوں نے مظاہرہ کیا

انڈیا کی وسطی ریاست مدھیہ پردیش میں پولیس کا کہنا ہے کہ مرینا ضلع میں ایک دلت کو صرف اس لیے مار مار کر ہلاک دیا گیا کیونکہ اس نے ایک سانپ کو مار ڈالا تھا۔

مرینا ضلع کے ایس ڈی ایم پردیپ سنگھ تومر کے مطابق: ’اس معاملے میں آٹھ نامزد اور دو نامعلوم افراد پر مقدمہ درج کیا گیا ہے۔‘

پولیس کا کہنا ہے کہ اتتم نگر علاقے میں رہنے والے وکیل جاٹو کے گھر گذشتہ جمعرات کو ایک سانپ نکلا تھا، جسے انھوں نے مار دیا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ جاٹو کے ہمسائے بنٹی، بھورا اور دوسرے لوگوں کو جب یہ بات پتہ چلی تو وہ کافی ناراض ہوئے کیونکہ وہ سانپ کو دیوتا کی طرح پوجتے ہیں۔

اسی بات پر ان لوگوں نے جاٹو کی مبینہ پٹائی کی جس کی وجہ سے انھوں نے ہسپتال پہنچنے سے پہلے ہی دم توڑ دیا۔

Image caption انڈیا میں بہت سے لوگ سانپ کو پوجتے ہیں

وکیل جاٹو کی موت کے بعد ان کے خاندان کے لوگوں نے پولیس کے رویے کے خلاف مظاہرہ کیا اور سڑکوں پر رکاوٹ کھڑکی کی۔ ان کا الزام ہے کہ پولیس نے ملزمان کو پکڑا اور پھر انھیں چھوڑ دیا۔

مدھیہ پردیش میں سانپ کے کاٹنے سے ہر سال بڑی تعداد میں لوگ مارے جاتے ہیں جبکہ انڈیا کے بعض علاقوں میں پسماندہ طبقے کے افراد کے ساتھ تشدد بھی کوئی نئی بات نہیں۔

ریاست کے ہوم گارڈ اور سول ڈیفنس ڈیپارٹمنٹ کے اعداد و شمار کے مطابق گذشتہ پانچ سال میں سانپ کے کاٹنے کی وجہ سے مجموعی طور پر 5،274 لوگ اپنی جان گنوا چکے ہیں۔

اسی بارے میں