بھارت: مدھیہ پردیش میں سیلاب سے 12 افراد ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ SHUREAH NIYAZI
Image caption جگہ جگہ سڑکیں ٹوٹ گئی ہیں

انڈیا کی وسطی ریاست مدھیہ پردیش میں تین دن سے مسلسل جاری بارش کے نتیجے میں اب تک 12 افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

حکام کا کہنا ہے کہ کئی اضلاع سیلاب کی زد میں ہیں اور ہزاروں لوگ متاثر ہوئے ہیں۔

ستنا ضلعے میں سیلاب سے متاثرہ لوگوں کی مدد کے لیے فوج کو طلب کیا گيا ہے۔ ریاست کے تمام 51 اضلاع میں امدادی مراکز کھولے گئے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ SHUREH NIYAZI
Image caption پٹرول سٹیشن پر بھی پانی بھر گيا ہے

دارالحکومت بھوپال سمیت تقریبا نصف مدھیہ پردیش میں سیلاب کا خطرہ ہے۔

بھوپال میں سنیچر کی رات سے ہونے والی مسلسل بارش نے صورت حال کو مزید خراب کر دیا ہے اور وہاں چار لوگوں مارے گئے ہیں۔ بہت رہائشی علاقوں میں پانی بھر گیا ہے اور کئی مقامات پر پانچ فٹ سیل رواں ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ SHUREH NIYAZI
Image caption املاک کو نقصان پہنچا ہے

محکمہ موسمیات نے بعض مقامات پر اگلے 24 گھنٹوں کے دوران مزید بارشوں کی پیش گوئی کی ہے۔

شدید بارش کے سبب ریاست سے گزرنے والے دریا نرمدا، پاروتی، چمبل اور کین میں طغیانی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ shureh niyazi
Image caption ریاست کے دریا طغیانی پر ہیں

بندیل کھنڈ علاقے کے پانچ اضلاع ساگر، چھتر پور، ٹیکم گڑھ، پننا، اور دموہ میں حالات ایسے ہی ہیں جیسے وہاں بادل پھٹ گئے ہوں۔

یہاں تین دنوں میں اوسطاً 300 ملی میٹر سے زیادہ بارش ریکارڈ کی گئی ہے۔ یہ وہ علاقے ہیں جو گذشتہ ہفتے تک خشک سالی کا سامنا کر رہے تھے اور اب حالات یہ ہے کہ لوگ بارش سے بے حال ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ SHUREH NIYAZI
Image caption گھروں میں پانی گھس آيا ہے

وزیر اعلیٰ شیوراج سنگھ چوہان نے سیلاب کی صورت حال کا جائزہ لینے کے لیے خصوصی اجلاس طلب کیا ہے۔

وزیر اعلی شیوراج سنگھ چوہان نے بتایا: ’حکومت بھوپال کے سیلاب سے متاثرہ علاقوں میں کھانے کے پیکٹ فراہم کرا رہی ہے۔ ستنا میں سیلاب میں پھنسے 4000 لوگوں کو نکالا گیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ shurah niyazi
Image caption سڑکیں زیر آب ہیں

انھوں نے کہا کہ حکومت سیلاب کے حالات سے نمٹنے کے لیے مکمل طور پر تیار ہے اور 51 اضلاع میں امدادی مرکز کھولے گئے ہیں۔