بہار میں بارودی سرنگ دھماکے، دس سکیورٹی اہلکار ہلاک

Image caption ماؤ نواز باغیوں نے بارودی سرنگ کے ذریعے سکیورٹی فورسز کے سپیشل سیل کوبرا پر حملہ کیا تھا

انڈیا کی شمال مشرقی ریاست بہار کے اورنگ آباد ضلعے میں بارودی سرنگ دھماکوں میں سکیورٹی فورسز کے دس اہلکار ہلاک ہو گئے ہیں۔

دریں اثنا سکیورٹی فورسز کی کارروائی میں تین ماؤ نواز باغیوں کی ہلاکت بھی اطلاعات ہیں۔

بہار کے آئی جی سنیل کمار نے صحافی نیرج سہائے کو بتایا کہ ’پیر اور منگل کی درمیاني شب ہونے والے واقعے میں نکسلیوں (ماؤنواز باغیوں) نے کئی دھماکے کیے جس میں سی آر پی ایف کے خصوصی دستے کوبرا (كمبیٹ بٹیلین فار ریزوليوٹ ایکشن) کے دس جوان ہلاک ہو گئے۔‘

دریں اثنا بہار کے آئی جی آپریشنز کندن کرشن نے بتایا ہے کہ کوبرا بٹیلین کی جوابی کارروائی میں چند نکسلی بھی مارے گئے ہیں۔ انھوں نے بتایا کے ’جائے حادثہ سے تین نکسلیوں کی لاشیں برآمد کی گئی ہیں۔‘

کرشنن نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کہا: ’ابھی كومبنگ آپریشن جاری ہے۔ ہو سکتا ہے کہ مزید ہلاکتیں ہوئی ہوں۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Neeraj Sinha
Image caption بہار اور جھارکھنڈ کے علاوہ ماؤنواز باغی کئی دوسری ریاستوں میں بھی سرگرم ہیں

بہار کے دارالحکومت پٹنہ سے صحافی نیرج سہائے نے بتایا کہ یہ حملے ڈمري گاؤں کے قریب سونداہا کے جنگلوں میں ہوئے اور زخمی اہلکاروں کو علاج کے لیے ہیلی کاپٹر کے ذریعے لایا جا رہا ہے۔

اس سے قبل پٹنہ میں واقع سی آر پی ایف کنٹرول روم نے کم از کم سات سکیورٹی اہلکاروں کے مارے جانے کے بارے میں بتایا تھا جبکہ سی آر پی ایف کے ہی ڈپٹی کمانڈنٹ سنجیو چودھری نے دو سکیورٹی اہلکاروں اور تین نکسلیوں کے مارے جانے کی تصدیق کی تھی۔

سنجیو چودھری نے یہ بھی کہا کہ تین زخمی اہلکاروں کو علاج کے لیے پٹنہ لایا گیا ہے جبکہ دو اہلکاروں کا گیا میں علاج جاری ہے۔

اسی بارے میں