کابل میں غیرملکیوں کے گیسٹ ہاؤس پر حملہ

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption تاحال حکام کی جانب سے ہلاک یا زخمی ہونے والوں کے بارے میں کوئی اطلاع نہیں دی گئی

اطلاعات کے مطابق افغانستان کے دارالحکومت کابل کے نواحی علاقے میں بگرام ایئربیس کے قریب واقع نارتھ گیٹ گیسٹ ہاؤس کو بارود سے لدے ایک ٹرک سے نشانہ بنایا گیا ہے۔

ہمارے نامہ نگار نے بتایا ہے کہ وہاں پولیس اور حملہ آوروں کے درمیان فائرنگ جاری ہے جس میں ایک سکیورٹی اہلکار اور ایک حملہ آور ہلاک ہوئے ہیں۔

٭ ’کابل میں شہریوں پر خودکش حملہ جنگی جرم ہے‘

٭ ’افغانستان میں بچوں کی ہلاکتوں میں شرمناک اضافہ‘

محمود زبیدہ نے بتایا ہے کہ فائرنگ میں ایک سکیورٹی اہلکار زخمی بھی ہوئے ہیں۔

اس گیسٹ ہاؤس میں غیرملکی کنٹریکرز قیام پذیر ہوتے ہیں۔

دھماکے کے بعد علاقے کو سکیورٹی فورسز نے گھیرے میں لے لیا اور فائرنگ کی آوازیں بھی سنی گئی ہیں۔

خبررساں ادارے روئٹرز کے مطابق ایک سکیورٹی اہلکار نے بتایا کہ اس حملے میں چار مسلح افراد بھی ملوث ہیں۔

خیال رہے کہ تین سال قبل بھی اس مقام کو نشانہ بنایا گیا تھا۔

عینی شاہدین کے مطابق دھماکہ مقامی وقت کے مطابق رات ایک بج کر 25 منٹ (جی ایم ٹی کے مطابق 20:55 بجے) پر ہوا اور اس کی آواز شہر کے بیشتر علاقوں میں سنی گئی۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption دھماکے کے بعد علاقے کو سکیورٹی فورسز نے گھیرے میں لے لیا

سوشل میڈیا پر شیئر کی جانے والی معلومات کے مطابق دھماکے سے کچھ لمحے پہلے تھوڑی دیر کے لیے شہر کے متعدد علاقوں میں بجلی منطقع ہوگئی تھی۔

اس سے قبل کسی گیس سٹوریج میں دھماکے کے بارے میں بتایا جارہا تھا۔ افغان چینل تولو نیوز کا کہنا تھا کہ یہ دھماکہ کابل کے مشرق میں واقع پل چکری کے علاقے میں ہوا ہے۔

اس حملے کی ذمہ داری افغان طالبان نے قبول کر لی ہے۔

خیال رہے کہ گذشہ دنوں کابل میں ہزارہ برادری سے تعلق رکھنے والے افراد کے ایک مظاہرے بھی خودکش حملے میں کم از کم 80 افراد ہلاک اور 230 سے زیادہ زخمی ہوگئے تھے۔

اسی بارے میں