افغانستان میں غیر ملکی سیاحوں پر حملہ، چھ زخمی

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

افغانستان میں حکام کے مطابق مشتبہ شدت پسندوں نے ملک کے مشرقی حصے میں غیر ملکی سیاحوں کے ایک قافلے پر حملہ کیا ہے۔

حکام کا کہنا ہے کہ شدت پسندوں کے اس حملے میں چھ غیر ملکی سیاح زخمی ہوئے ہیں۔

* کابل میں غیرملکیوں کے گیسٹ ہاؤس پر حملہ

* ’کابل میں شہریوں پر خودکش حملہ جنگی جرم ہے‘

* کابل: ریلی پر خود کش حملے میں 80 ہلاک، 230 زخمی

افغان حکام نے بی بی سی کو بتایا کہ ایک درجن غیر ملکی سیاحوں کا یہ گروپ فوج کی حفاظت میں صوبے ہیرات کی جانب جا رہا تھا جب اسے راستے میں نشانہ بنایا گیا۔

افغانستان کے صوبے ہیرات کے گورنر کے ترجمان جیلانی فرحاد نے بی بی سی کو بتایا کہ غیر ملکی سیاحوں میں برطانیہ کے آٹھ، امریکہ کے تین اور جرمنی کا ایک سیاح شامل تھا۔

اطلاعات کے مطابق کچھ سیاحوں کو معمولی زخم آئے ہیں اور وہ ہسپتال میں ہیں۔

واضح رہے کہ افغانستان کی مرکزی شاہراہیں شدت پسندوں کے حملوں اور غیر ملکیوں کو اغوا کرنے کی وجہ سے بدنام ہیں۔

حکام کا کہنا ہے کہ یہ واقعہ صوبے ہیرات کی سٹرک پر پیش آیا۔

افغانستان کی وزارتِ داخلہ کے ترجمان صادق صدیقی نے افغانستان کے تولو نیوز چینل کو بتایا کہ غیر ملکی سیاح بامیان سے ہیرات جا رہے تھے۔

اسی بارے میں