’سیاح خواتین سکرٹ پہننے سے گریز کریں‘

Image caption بھارتیہ جنتا پارٹی کے رہنما اور مرکزی وزیر مہیش شرما اس سے قبل بھی متنازع بیانات دیتے رہے ہیں

انڈیا کے مرکزی وزیر ثقافت اور سیاحت کا کہنا ہے کہ بیرونی ممالک سے آنے والی خواتین سیاحوں کو اپنے تحفظ کے لیے چھوٹے کپڑے اور سکرٹ پہننے سے گریز کرنا چاہیے۔

مرکزی وزیر ثقافت اور سیاحت مہیش شرما کا کہنا ہے کہ خواتین کو رات کے وقت تنہا باہر نہیں نکلنا چاہیے۔

انھوں نے کہا کہ جب بھی بیرونی ممالک کے سیاح انڈیا پہنچتے ہیں تو انھیں اس بارے میں بعض خصوصی مشورے بھی دیے جاتے ہیں۔

مہیش شرما نے کہا: ’جب سیاح ایئر پورٹ پر پہنچتے ہیں تو انھیں کیا کریں اور کیا نہ کریں اس کے لیے ایک پمفلٹ دیا جاتا ہے، اس پر اس طرح کی ہدایات درج ہوتی ہیں کہ اگر آپ کسی چھوٹے شہر میں ہوں تو تنہا نہ پھریں اور سکرٹ نہ پہنیں۔ جس ٹیکسی میں سفر کریں اس کی تصویر لے کر اپنے دوستوں کو بھیج دیں۔‘

انھوں اپنی بات جاری رکھتے ہوئے کہا کہ انڈیا ایک ثقافتی ملک ہے اور ’مندروں میں جانے کے لیے ہمارا ایک مختلف ڈریس کوڈ ہوتا ہے۔ تو برائے مہربانی لباس زیب تن کرتے وقت اس کا خیال رکھیں۔‘

مرکزی وزیر نے یہ باتیں آگرہ شہر میں خواتین اور سیاحوں کے تحفظ سے متعلق ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے کہیں۔

آکرہ شہر تاج محل اور فتح پور سیکری میں مغلیہ دور کی تعمیرات دیکھنے کے لیے آنے والے سیاحوں کا جمگھٹا رہتا ہے جہاں بیرونی ممالک کے بھی سیاح بڑی تعداد میں آتے ہیں۔

ایک سوال کے جواب میں مرکزی وزیر مہیش شرما نے کہا کہ وہ سیاحوں سے یہ نہیں کہہ رہے ہیں کہ وہ کیا پہنیں اور کیا نہیں لیکن اپنے تحفظ کے مقصد سے انھیں احتیاط برتنی چاہیے۔

بھارتی میڈیا میں مرکزی وزیر کے اس بیان کے کافی تذکرے ہیں اور مختلف ویب سائٹوں پر اس پر نکتہ چینی سے پر خبریں بھی شائع ہو رہی ہیں۔

اسی بارے میں