BBCUrdu.com
  •    تکنيکي مدد
 
پاکستان
انڈیا
آس پاس
کھیل
نیٹ سائنس
فن فنکار
ویڈیو، تصاویر
آپ کی آواز
قلم اور کالم
منظرنامہ
ریڈیو
پروگرام
فریکوئنسی
ہمارے پارٹنر
ہندی
فارسی
پشتو
عربی
بنگالی
انگریزی ۔ جنوبی ایشیا
دیگر زبانیں
 
وقتِ اشاعت: Thursday, 26 August, 2004, 17:04 GMT 22:04 PST
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے پرِنٹ کریں
چے گویرا کے راستوں پر ایک بار پھر
 
عالمی سطح پر چے گویرا کی مقبولیت برقرار۔
’مجھے یاد ہے چے کی وہ اندر اترتی ہوئی آنکھیں، اس کی خوبرو شخصیت اور اس کی موجودگی کا ایک خشگوار احساس۔‘

بولیویا کے ایک چھوٹے سے قصبے لا ہیگورا میں جس دن چے گویرا کو پکڑا گیا تھا اس دن کو ایک انیس سالہ زیر تربیت ٹیچر جولیا کورٹیز اس طرح یاد کرتی ہے۔

جولیا کو ابھی بھی یاد ہے جب وہ اسی قصبے میں چے سے ملی تھی۔ جولیا چے گویرا کو ملنے والے چند آخری لوگوں میں ایک ہیں کیونکہ آٹھ اکتوبر انیس سو ستاسٹھ کو لا ہیگورا کے اسی قصبے میں چے گویرا کو پکڑا اور بعد میں مارا گیا تھا۔

اب بولیویا کے اس قصبے کو دیکھنے والوں کا رش بڑھ رہا ہے اور پہلی مرتبہ بولیویا کی سیاحت کی انڈسٹری کی حوصلہ افزائی کے لئے برطانیہ کی مالی امداد کے ساتھ اس سلسلے میں ایک پروجیکٹ بھی کیا جا رہا ہے۔

چے انیس سو چھیاسٹھ میں بولیویا میں ایک سماجی انقلاب برپا کرنے آئے تھے لیکن انہیں دھوکا دیا گیا اور ایک لڑائی کے بعد انہیں پکڑوا دیا گیا۔ اور اگلے ہی روز یعنی نو اکتوبر انیس سو ستاسٹھ کو انہیں بولیوین فوج نے مار دیا اور اس کی لاش کو عالمی میڈیا کے سامنے گھمایا گیا۔

اب ایک بین الاقوامی این جی او کی مدد سے بولیویا میں ان جگہوں پر جہاں چے گویرا نے سفر کیا یہ پروجیکٹ لانچ کیا گیا ہے جس سے مقامی لوگوں کے علاوہ ملک میں سیاحت کی انڈسٹری کو بھی فائدہ پہنچے گا۔

 
 
تازہ ترین خبریں
 
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے پرِنٹ کریں
 

واپس اوپر
Copyright BBC
نیٹ سائنس کھیل آس پاس انڈیاپاکستان صفحہِ اول
 
منظرنامہ قلم اور کالم آپ کی آواز ویڈیو، تصاویر
 
BBC Languages >> | BBC World Service >> | BBC Weather >> | BBC Sport >> | BBC News >>  
پرائیویسی ہمارے بارے میں ہمیں لکھیئے تکنیکی مدد