BBCUrdu.com
  •    تکنيکي مدد
 
پاکستان
انڈیا
آس پاس
کھیل
نیٹ سائنس
فن فنکار
ویڈیو، تصاویر
آپ کی آواز
قلم اور کالم
منظرنامہ
ریڈیو
پروگرام
فریکوئنسی
ہمارے پارٹنر
آر ایس ایس کیا ہے
آر ایس ایس کیا ہے
ہندی
فارسی
پشتو
عربی
بنگالی
انگریزی ۔ جنوبی ایشیا
دیگر زبانیں
 
وقتِ اشاعت: Wednesday, 25 October, 2006, 00:50 GMT 05:50 PST
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے پرِنٹ کریں
عراق: اکتوبر میں 90 فوجی ہلاک
 
بغداد
امریکی حکام نے اعلان کیا ہے کہ مزید چار امریکی فوجی ہلاک ہو گۓ ہیں
اکتوبر میں 90 فوجی ہلاک ہوئے ہیں اور صدر بش کی انتظامیہ کے سینیئر حکام مسلسل یہ تاثر دینے کی کوشش کر رہے ہیں کہ عراق میں حالات پر قابو پایا جا سکتا ہے اور بش پالیسی کامیاب رہے گی۔

عراق میں امریکی فوجی حکام نے بتایا ہے کہ اکتوبر کے مہینے میں ہلاک ہونے والے فوجیوں کی تعداد نوے ہوگئی ہے۔

عراق میں امریکی حکام نے اعلان کیا ہے کہ مزید چار امریکی فوجی ہلاک ہو گۓ ہیں۔

ان میں دو عام فوجی تھے اور دو میرین فوجی اور یہ چاروں پیر کے دن الانبار کے صوبے میں جھڑپ کے دوران ہلاک ہوئے۔ اس سے پہلے بتایا گیا تھا کہ الانبار ایک فوجی ہلاک ہوا ہے جب کہ پانچ بغداد میں ہلاک ہوئے ہیں۔

حکام کے مطابق ایک اور فوجی بغداد میں سڑک کے کنارے لگے ہوئے بم کی زد میں آ کر زخمی ہوا اور زخموں کی تاب نہ لاکر چل بسا۔

امریکی فوجی ترجمان نے یہ بھی بتایا کہ فلوجہ میں چار امریکی فوجی خود اپنے ساتھیوں کی فائرنگ سے ہلاک ہو گۓ۔

صدر جارج بش کی انتظامیہ میں سینیئر حکام نے لگاتار کئی انٹرویو دیے ہیں تاکہ عوام کو یہ یقین دلائیں کہ عراق میں کامیابی حاصل کی جاسکتی ہے۔

قومی سلامتی کے مشیر سٹیفن ہینڈلی نے کہا ہے کہ عراقی حکومت نے وہ سخت اقدامات کرنے شروع کردیے ہیں جن کی اشد ضرورت ہے لیکن اسے زیادہ سے زیادہ اور جلد از جلد فیصلے کرنے ہونگے۔

 نائب صدر ڈک چینی
نائب صدر ڈک چینی نے کہا ہے ہماری حکمت عملی یہ ہے کہ عراقیوں کو ان کے پیروں پر اس طرح کھڑا کردیں

نائب صدر ڈک چینی نے کہا ہے ہماری حکمت عملی یہ ہے کہ عراقیوں کو ان کے پیروں پر اس طرح کھڑا کردیں کہ اپنے معاملات خود نمٹا سکیں۔

اُدھر بغداد میں امریکی کمانڈر جنرل جارج کے سی نے کہا ہے کہ عراقی فوجیں تحفظ کے معاملات کا پورا کنٹرول اٹھارہ مہینے میں سنبھال لیں گی اور شورش بغداد کے آس پاس تک محدود ہے۔

مبصرین امریکی حکام کے ان دعووں سے اتفاق نہیں کرتے اور خود ریپبلکن پارٹی میں امریکہ کی خارجہ پالیسی پر بے چینی بڑھ رہی ہے اور ایک ریپبلکن سینیٹر لنڈسے گریہم کا کہنا ہے کہ یہ پالیسی افراتفری کے دہانے تک آ پہنچی ہے۔

 
 
اسی بارے میں
بغداد میں مکمل کرفیو نافذ
30 September, 2006 | آس پاس
بغداد مردہ خانے بھر گئے
14 August, 2006 | آس پاس
تازہ ترین خبریں
 
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے پرِنٹ کریں
 

واپس اوپر
Copyright BBC
نیٹ سائنس کھیل آس پاس انڈیاپاکستان صفحہِ اول
 
منظرنامہ قلم اور کالم آپ کی آواز ویڈیو، تصاویر
 
BBC Languages >> | BBC World Service >> | BBC Weather >> | BBC Sport >> | BBC News >>  
پرائیویسی ہمارے بارے میں ہمیں لکھیئے تکنیکی مدد