سندھ: مسلم لیگ نون کے دفاتر میں توڑ پھوڑ

پاکستان کے صوبہ سندھ کے متعدد شہروں میں مقامی میڈیا کے مطابق مسلم لیگ نون کے دفاتر میں توڑ پھوڑ کی گئی اور بعض کو نذرِ آتش کیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ جمعہ کو مسلم لیگ نون کے رہنماء اور وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے ایک جلسے سے خطاب کرتے ہوئے صدر آصف علی زرداری سے مطالبہ کیا تھا کہ وہ اپنا عہدہ چھوڑ دیں ورنہ انہیں لاہور کے بھاٹی چوک میں الٹا لٹکایا جائے گا۔

پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنماء اور وفاقی وزیرِ داخلہ رحمان ملک نے مسلم لیگ نون کے دفاتر پر حملوں کا سختی سے نوٹس لیتے ہوئے تین روز میں تحقیقات مکمل کرنے کا حکم دیا ہے۔تاہم اس کے ساتھ وزیر داخلہ نے مسلم لیگ نون کے رہنماء اور وزیراعلیٰ پنجاب پر سخت تنقید کی ہے۔

سرکاری خبر رساں ادارے اے پی پی کے مطابق انھوں نے کہا کہ صدر، قومی اسمبلی اور سینیٹ افراد نہیں بلکہ ادارے ہیں۔

بقول اُن کے’اگر کوئی بھی ملک کے کسی ادارے کے خلاف بیان دیتا ہے تو اس کے خلاف آئین کے آرٹیکل چھ کے تحت کارروائی کی جا سکتی ہے۔‘

انھوں نے کہا کہ شہباز شریف نے آئین کے آرٹیکل چھ کی خلاف ورزی کی ہے اور ان کے خلاف کارروائی کی جا سکتی ہے۔

دوسری جانب اتوار کو پاکستان پیپلز پارٹی کی اتحادی جماعت متحدہ قومی موومنٹ صدر زرداری کے ساتھ اظہار یکجہتی اور اُن کے خلاف شہباز شریف کی تقریر کی مزمت میں ایک ریلی نکال رہی ہے۔