’اب تعاون تحریری اور اصولوں کی بنیاد پر‘

پاکستان کی وزیر خارجہ حنا ربانی کھر نے کہا ہے کہ اب امریکا سے جو بھی تعاون ہوگا وہ تحریری اور اصولوں کی بنیاد پر ہو گا اور اگر امریکہ یا نیٹو نے دوبارہ مہمند حملے جیسی کارروائی کی تو ان کے ساتھ پر تعاون پر نظر ثانی کی جائے گی۔

پاکستان کی پارلیمنٹ کے ایوان بالا کی قائمہ کمیٹی برائے خارجہ امور کے سامنے بیان دیتے ہوئے حنا ربانی کھر نے کہا کہ ’خون فوجی کا ہو یا سویلین کا، خون خون ہی ہے اور ہمارے فوجی کا خون بھی اتنا ہے قیمتی ہے جتنا نیٹو یا امریکا کے فوجی کا‘۔

انہوں نے کہا کہ جب تک امریکا ڈرون حملے نہیں روکتا، ہماری خود مختاری اور سلامتی کی ضمانت نہیں دیتا ہمارے لیے ان کا ساتھ دینا مشکل ہوگا۔