’شام کیخلاف عالمی عدالت سے رابطے میں دیر نہیں‘

اقوامِ متحدہ میں انسانی حقوق کے ادارے نے شام پر حکومت مخالف مظاہرین کو تشدد کے ذریعے دبانے پر کڑی تنقید کی ہے۔ ادارے نے ایک خصوصی تحقیق کار کو تعینات کیا ہے جو شام میں انسانی حقوق کے پامالی کے ثبوت اکٹھے کرے گا۔

اقوامِ متحدہ کے ادارہ برائے انسانی حقوق نے شام کے خلاف قرار منظور کی ہے جس میں مطالبہ کیا گیا کہ تشدد کو فوری طور پر ختم کیا جائے، قیدیوں کو رہا کیا جائے اور شامی فوج کے اُن تمام اہلکاروں کو معطل کیا جائے جن کے بارے میں شبہ ہے کہ وہ انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے مرتکب ہوئے ہیں۔

بی بی سی کے نامہ نگار کا کہنا ہے کہ بیشتر سفیروں کا ماننا ہے کہ اب بہت کم وقت رہ گیا ہے کہ شام کے خلاف جرائم کی بین الالقوامی عدالت سے رابطہ کر لیا جائے گا۔