’استحکام کے لیے عالمی تعاون کی ضرورت‘

افغان صدر حامد کرزئی نے جرمنی کے شہر بون میں افغانستان کے مستقبل کے بارے میں منقعدہ کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ سال دو ہزار چودہ میں نیٹو افواج کے انخلاء کے بعد افغانستان میں استحکام کے لیے بین الاقوامی تعاون کی ضرورت ہو گی۔

اس سے قبل پاکستان کا اس کانفرنس میں شرکت نہ کرنے کا فیصلہ موضوع بحث بنا رہا۔

پاکستان نے اپنے قبائلی علاقے مہمند ایجنسی میں نیٹو کے ایک حملے میں چوبیس فوجیوں کی بعد احتجاج کے طور پر اس کانفرنس میں شرکت سے انکار کردیا تھا۔

ایسی ہی ایک کانفرنس دس سال قبل افغانستان میں طالبان کی حکومت کے خاتمہ کے چند ہفتوں بعد اسی شہر میں منعقد ہوئی تھی۔