’ اسامہ ہی ہلاک ہوا،یہ کہنا قبل از وقت‘

دو مئی کو ایبٹ آباد میں امریکی کارروائی کے واقعے کی تحقیقات کرنے والے کمیشن کے سربراہ جسٹس ریٹارئرڈ جاوید اقبال کا کہنا ہے کہ امریکی افواج کے ہاتھوں ہلاک ہونے والے شخص کے بارے میں یہ کہنا قبل از وقت ہوگا کہ اس فوجی کارروائی کے دوران ہلاک ہونے والا شخص القاعدہ کے رہنما اُسامہ بن لادن ہی تھے۔

جمعرات کو کمیشن کے ارکان کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے اُنہوں نے کہا کہ اس سے متعلق شواہد اکھٹے کیے جارہے ہیں اور حتمی رپورٹ میں اس بارے میں آگاہ کر دیا جائے گا۔

اُنہوں نے کہا کہ کمیشن کی حتمی رپورٹ دسمبر کے آخر میں حکومت کو پیش کر دی جائے گی اور اس کے بعد حکومت کا استحقاق ہے کہ وہ اس رپورٹ کو عام کرتی ہے کہ نہیں تاہم اُن کا کہنا تھا کہ اس بات کے امکانت بہت کم ہیں کہ اس کمیشن کی رپورٹ کو اُس وقت کے مشرقی پاکستان کے علیحدہ ہونے سے متعلق بنائے جانے والے حمودالرحمنٰ کمیشن کی رپورٹ کی طرح دبا دیا جائے گا

جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال کا کہنا تھا کہ کمیشن کے بیس اجلاس ہوئے جس میں ایک سو کے قریب گواہوں کے بیانات قلمبند کیے گئے۔