سلامتی کونسل میں قرارداد پر بحث ’بے نتیجہ‘

اقوامِ متحدہ کی سلامتی کونسل میں شام میں تشدد میں اضافے کے بعد صدر بشار الاسد سے اقتدار چھوڑنے کے مطالبے پر مبنی قرارداد پر بحث بے نتیجہ رہی ہے۔

منگل کی رات گئے تک جاری رہنے والا سلامتی کونسل کا اجلاس کسی حتمی نتیجے پر پہنچے بغیر ختم ہوگیا ہے۔

شامی صدر کو اقتدار سے علیحدہ ہونے اور حکومت اپنے نائب کے حوالے کرنے کی تجویز عرب لیگ نے دی ہے۔

عرب لیگ کے مجوزہ منصوبے کے مطابق شام کے صدر اقتدار اپنے نائب کے حوالے کر دیں تاکہ دو ماہ کے اندر ایک نئی متحدہ قومی حکومت تشکیل دی جا سکے۔ امریکہ، برطانیہ اور فرانس نے اس منصوبے کی حمایت کی ہے مگر شام نے اسے مسترد کر دیا ہے۔

خلیجی ریاست قطر نے اقوام متحدہ پر زور دیا ہے کہ وہ اس کے بقول صدر اسد کی قاتل مشین کو روکنے کے لیے کارروائی کرے جو شامی عوام کا قتل عام کر رہی ہے۔ اب تک 5400 افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔