’حماس معاہدہ یا اسرائیل سے امن مذاکرات‘

اسرائیلی وزیرِ اعظم بنیامن نتین یاہو نے کہا کہے کہ فلسطینی حکام کو حماس کے ساتھ معاہدے یا پھر اسرائیل کے ساتھ امن مذاکرات میں سے کسی ایک کا انتخاب کرنا ہوگا۔

اسرائیل نے خبردار کیا ہے کہ آئندہ انتخابات کے دوران عبوری حکومت کے قیام کے لیے فلسطینی گروہوں حماس اور فتح کے درمیان ہونے والے معاہدے نے، اسرائیل کے ساتھ امن مزاکرات کے امکانات ضائع کر دیے ہیں۔

اسرائیلی وزیرِاعظم بنیامِن نیتن یاہو کا کہنا تھا کہ حماس ایک دہشتگرد تنظیم ہے جس کا مقصد اسرائیل کی تباہی ہے اور اسے ایران کی مدد حاصل ہے۔

’فلسطینی انتظامیہ کو حماس کے ساتھ معاہدے یا پھر اسرائیل کے ساتھ امن میں سے کسی ایک کا انتخاب کرنا ہو گا۔ حماس اور امن ساتھ ساتھ نہیں چل سکتے۔‘

اس سے قبل حماس اور فتح کے درمیان طے پایا تھا کہ عبوری حکومت، موجودہ صدر محمود عباس کی نگرانی میں قائم ہو گی۔