کوفی عنان کی شامی صدر سے دوسری ملاقات

شام کے بحران کے حل کے لیے اقوامِ متحدہ اور عرب لیگ کے مشترکہ ایلچی کوفی عنان نے کہا ہے کہ انھوں نے شامی صدر بشارالاسد سے دوسری ملاقات میں ٹھوس تجاویز پیش کی ہیں۔

کوفی عنان کا کہنا ہے کہ شام میں جاری قتل و غارت کو روکنے کے حوالے سے ابھی کوئی حمتی سمجھوتہ طے نہیں پایا ہے۔

کوفی عنان نے شام میں صدر بشار الاسد سے اپنی دوسری ملاقات کے بعد صحافیوں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ انھوں نے صدر کو تجاویز پیش کی ہیں اور اگر ان پر متفق ہوتے ہیں تو اس سے ’ پرتشدد واقعات‘ کے بحران کے خاتمے اور سیاسی عمل شروع کرنے میں مدد ملے گی۔

’ہماری بات چیت فوری طور پر تشدد اور ہلاکتوں کو روکنے، امدادی تنظیموں کو رسائی دینے اور سیاسی بات چیت یا سیاسی عمل شروع کرنے جیسے بنیادی مقاصد پر مرکوز رہی۔‘

کوفی عنان نے کہا کہ انھوں نے شامی صدر پر زور دیا کہ وہ تبدیلیوں اور اصلاحات کو منظور کریں۔

کوفی عنان کے بقول انھوں نے شامی صدر کو ایک پرانی عرب کہاوت سنائی کہ’ آپ ہوا کے رخ کو تبدیل نہیں کر سکتے اس لیے بادبان کا رخ موڑ لیں۔‘

’صورتحال مشکل ہونے جا رہی لیکن ہمیں امید رکھنی چاہیے۔‘