برطانیہ میں جعلی شادیاں کرانے والوں کو سزا

چیک جمہوریہ کے ایک شخص اور پولینڈ کی ایک خاتون کو برطانیہ میں رہنے کے لیے لوگوں کی جعلی شادیاں کرانے کے جرم میں سزا سنائی گئی ہے۔

یہ دونوں یورپی ممالک کے باہر کے لوگوں سے مشرقی یورپ کی انجان لڑکیوں کے ساتھ جعلی شادی کرانے کے لیے ہزاروں پاؤنڈ وصول کرتے تھے۔

اینڈزلینا نام کی خاتون جو خود چار بچوں کی ماں ہیں مشرقی یورپ کی ان لڑکیوں کی جعلی شادیاں کرواتی تھیں جنہیں پیسے کی اشد ضرورت ہوتی ہے۔

اینڈزلینا فرار ہیں اور ان کی گرفتاری کے وارنٹ جاری کر دیے گئے ہیں۔

دونوں کو چار سے پانچ سال کی سزا سنائی گئی ہے۔

اس معاملے میں جو لوگ بھی ملوث پائے جائیں گے انہیں سزا پوری ہونے کے بعد ان کے وطن واپس روانہ کر دیا جائے گا۔