بھارتی معیشت، درجہ بندی گر گئی

دنیا کی معیشتوں کی حالت کا تجزیہ کرنے والے عالمی ادارے سٹینڈرڈ اینڈ پوورز (ایس اینڈ پی) نے بھارت کی معیشت کو مستحکم کے زمرے سے ہٹا کر منفی درجے میں کر دیا ہے اور متنبہ کیا ہے کہ اگر آئندہ دو برسوں میں معیشت میں بہتری نہ آئی تو بھارت کی معیشت کمتر درجے میں شمار کی جائے گی ۔

اس تجزیے کے بعد بھارت کے حصص بازاروں میں زبردست گراوٹ آئی ہے ۔

معاشی اصطلاح میں بھارتی معیشت کی درجہ بندی اِس وقت ٹریبل بی پلس ہے جسے ایس اینڈ پی نے منفی درجے میں ڈالتے ہوئے ٹریبل بی مائنس کر دیا ہے ۔ اس سے بھارتی کمپنیوں کو غیر ممالک سے قرضے مہنگی شرحوں پر ملیں گے اور حصص بازار پر بھی برا اثر پڑے گا۔ ٹریبل بی مائنس سرمایہ کاری کے لیے سب سے کم درجہ ہے ۔

معیشت کی درجہ بندی کرنے والی ایجنسی نے کہا ہے کہ ’معیشت کو منفی زمرے میں رکھنا اس بات کا اشارہ ہے کہ بھارتی معیشت دو برس میں کمتر درجے کی جانب گامزن ہے‘۔