صوبۂ جنوبی پنجاب کی قرارداد منظور

حکومت نے جمعرات کو کثرت رائے سے جنوبی پنجاب کے نام سے نیا صوبہ بنانے کی قرارداد قومی اسمبلی سے منظور کرالی ہے۔

مسلم لیگ (ن) جو وزیراعظم کو توہین عدالت کیس میں سزا ملنے پر احتجاج کر رہی تھی انہوں نے اس موقع پر شدید نعرہ بازی کرتے ہوئے ہنگامہ آرائی کی۔

ایک موقع پر عابد شیر علی اور اخونزادہ چٹان میں ہاتھا پائی بھی ہوئی لیکن دونوں جانب کے اراکین نے بیچ بچاؤ کرایا۔

وزیر قانون فاروق نائک نے قواعد معطل کر کے جنوبی پنجاب کا صوبہ بنانے کی قرارداد پیش کی۔

انہوں نے ایک اور قرارداد بھی پیش کی جو وزیراعظم سید یوسف رضا گیلانی پر اعتماد کا اظہار کرنے کے بارے میں تھی اور وہ بھی کثرت رائے سے منظور کرلی گئی۔