بنگلہ دیش: غلام اعظم پر فردِ جرم عائد

چالیس سال قبل بنگلہ دیش کی جنگِ آزادی کے دوران سرزد کیے گئے جرائم کی تحقیقات کرنے والی ایک خصوصی عدالت نے معروف مذہبی جماعت کے رہنماء غلام اعظم پر جنگی جرائم کی فردِ جرم عائد کر دی ہے۔

غلام اعظم کی عمر اوناسی سال ہے اور ایک وقت وہ بنگلہ دیش کی سب سے بڑی مذہبی جماعت، جماعتِ اسلامی کے سربراہ تھے۔

جماعتِ اسلامی نے ان الزامات کی تردید کی ہے جن میں قتل اور تشدد بھی شامل ہیں۔

غلام اعظم کا مقدمے کئی مہینے جاری رہنے کی توقع ہے۔

جماعت اسلامی اور حزبِ اختلاف کی مرکزی جماعت بنگلہ دیش نیشنلشٹ پارٹی نے حکومت پر سیاسی بدلہ لینے کا الزام لگایا ہے۔ ا

اسی بارے میں