مظاہرین کی ہلاکت، پولیس اہلکاروں کو سزا

مصر میں ایک عدالت نے سابق صدر حسنی مبارک کے خلاف چلائی گئی تحریک کے دوران مظاہرین کی ہلاکت میں ملوث ہونے کے الزام میں پانچ پولیس اہلکاروں کو دس سال قید کی سزا سنائی ہے۔

دو ہزار گیارہ میں حسنی مبارک کے دورِ اقتدار کے خاتمے کے بعد یہ پہلا موقع ہے کہ حکومتی افسران کو تشدد کا مجرم ٹھہراتے ہوئے سزا سنائی گئی ہے۔

عدالت نے اسی مقدمے کے دو ملزمان پولیس افسران کو ایک ایک سال کی معطل سزا سنائی جبکہ دیگر دس اہلکاروں کو بری کر دیا گیا۔

یہ فیصلہ ایک ایسے موقع پر آیا ہے جب مصری عوام ملک کے نئے صدر کا انتخاب کرنے والی ہے۔

مصر میں پولیس پر احتجاجی تحریک کے دوران سینکڑوں مظاہرین کی ہلاکت کا الزام لگتا رہا ہے اور پولیس کے اس رویے نے حسنی مبارک کی حکومت کے خلاف عوامی اشتعال میں اضافہ کیا تھا۔