ڈاکٹر کی مدد سے خودکشی درست ہے: جج

کینڈا کی سپریم کورٹ کے ایک جج نے فیصلہ دیا ہے کہ ’انسانی بنیادوں پر موت‘ مانگنے والے بسترِ مرگ پر پڑے مریضوں کو ڈاکٹر کی مدد سے خود کشی کرنے سے روکنے والا قانون غیر آئینی ہے۔

جسٹس لیون سمتھ نے اپنے فیصلے کو ایک سال کے لیے محفوظ کر دیا ہے تاکہ اس دوران پارلیمان نیا قانون بنا سکے۔

جج نے ایک مشہور مریض گلوریا ٹیلر کے کیس میں فیصلہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ اگر وہ چاہیں تو ایک سال کے اندر اندر اپنے ڈاکٹر کی مدد سے اپنی زندگی کا خاتمہ کر سکتی ہیں۔

اسی بارے میں