لاپتہ افراد کیس: ’پیشرفت نہیں ہوئی‘

صوبہ بلوچستان کے ایڈووکیٹ جنرل امان اللہ قدرانی نے سپریم کورٹ کو بتایا ہے کہ صوبے سے 146 لاپتہ افراد ہوئے ہیں۔

تاہم انہوں نے کہا کہ ان کی بازیابی کے لیے کوئی پیش رفت نہیں ہو سکی ہے کیونکہ انسپکٹر جنرل پولیس سمیت صوبائی پولیس میں بڑے پیمانے پر تدبیلیاں ہوئی ہیں۔

یہ بات بلوچستان کے ایڈووکیٹ جنرل نے سپریم کورٹ کو بلوچستان میں امن و امان کے مقدمے کی سمات کے دوران بتائی۔

ایڈووکیٹ جنرل کے اس بیان پر پاکستان کے چیف جسٹس جسٹس افتخار محمد چوہدری نے کہا کہ بلوچستان سے ہونے والے لاپتہ افراد کے بارے میں اچھا پیغام نہیں دیا جا رہا۔