’ترک طیارہ عالمی فضائی حدود میں نشانہ بنا‘

ترکی کے وزیرِ خارجہ کا کہنا ہے کہ شامی فوج نے جمعہ کو جس ترک طیارے کو مار گرایا تھا وہ اس وقت عالمی فضائی حدود میں تھا جب اسے نشانہ بنایا گیا۔

احمد داؤد اوغلو کے مطابق طیارہ مار گرائے جانے سے کچھ دیر قبل ضرور شام کی فضائی حدود میں بھٹک کر داخل ہوا تھا لیکن وہ وہاں سے واپس نکل آیا تھا۔

ان کے مطابق وہ طیارہ نہ تو ہتھیاروں سے لیس تھا اور نہ ہی شام سے متعلق کسی خفیہ مشن پر تھا۔

ادھر شام کا کہنا ہے کہ اس نے طیارے کے خلاف اپنی فضائی حدود میں ان قوانین کے تحت کارروائی کی جو اس قسم کی صورتحال کے لیے متعین ہیں۔

اسی بارے میں