’آئین سازی صرف پارلیمان کا حق ہے‘

پاکستان میں حکمران جماعت، پیپلز پارٹی نے دو ٹوک الفاظ میں کہا ہے کہ قانون سازی پارلیمان کا حق ہے اور اس مقصد کے لیے نئے وجود میں آنے والے مراکز کی قانون اور آئین کے دائرے میں رہتے ہوئے مزاحمت کریں گے۔

ایوان صدر میں صدرِ پاکستان آصف علی زرداری اور وزیراعظم راجہ پرویز اشرف کی زیر صدارت ہونے والے اعلیٰ سطحی اجلاس کے بعد جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا ہے کہ پیپلز پارٹی نے حکومت کو درپیش قانونی چیلینجز سے نمٹنے کے لیے حکمت عملی مرتب کرلی ہے، جس کی منظوری بھی لی گئی ہے۔

سینیٹر فرحت اللہ بابر نے یہ تو بتایا ہے کہ پیپلز پارٹی نے قانونی چیلینجز سے نمٹنے کی حکمت عملی بنالی ہے لیکن اس کی تفصیل نہیں بتائی۔

حکمران پیپلز پارٹی کا یہ اعلان سپریم کورٹ کی جانب سے وزیراعظم کے خلاف سوئز حکام کو خط نہ لکھنے کے مقدمے کی سماعت سے محض چودہ گھنٹے پہلے سامنے آیا ہے۔

بیان میں عدلیہ کا ذکر کیے بنا واضح طور پر کہا گیا ہے کہ حکومت پارلیمان کے قانون سازی کے حق لیے ہر قیمت پر مزاحمت کریں گے۔