فرانس: خانہ بدوش قوم’روما‘ کی ملک بدری

فرانس کے شمالی علاقے میں حکام نے ’قدیم خانہ بدوش قوم‘ روما کے پناہ گزینوں کو ملک بدر کرنا شروع کر دیا ہے۔

حقوق انسانی کی تنظیموں نے سابق صدر نکلولس سرکوزی کی جانب سے ان پناہ گزینوں کو ملک بدر کرنے کی متازع پالیسی کی مخالفت کی ہے۔

خیال رہے کہ روما پناہ گزین جن کو عام طور پر جپسی کے نام سے جانا جاتا ہے، کے بارے میں خیال ہے کہ یہ قدیم خانہ بدوش قوم سینکڑوں سال پہلے برصغیر سے ہجرت کر کے یورپ اور براعظم افریقہ منتقل ہو گئی تھی۔

افریقہ میں یہ قوم مقامی لوگوں سے گھل مل گئی لیکن یورپ میں یہ قوم مقامی قوموں کے ساتھ گھل مل نہیں سکی۔ فرانس کے شہر لِل کے قریب واقع ایک کیمپ سے دو سو کے قریب لوگوں کو بے دخل کیا گیا ہے۔

دریں اثناء دو سو پچاس روما خانہ بدوشوں کو رومانیہ سے ملک بدر کیا جا رہا ہے۔

حقوق انسانی کی تنظیموں کا کہنا ہے کہ فرانس کے نو منتخب صدر فرانسوا اولاند نے وعدہ کیا تھا کہ روما خانہ بدوشوں کو قانونی طور پر ملک بدر کرنے سے پہلے متبادل تجاویز دی جائیں گے۔