کابل سے پانچ مبینہ شدت پسند گرفتار

افغانستان میں افغان اور نیٹو حکام کے مطابق سنیچر کی رات کو کابل میں ایک کارروائی کے دوران پانچ مبینہ شدت پسندوں کو گرفتار کیا گیا ہے۔

افغان حکام کے مطابق گرفتار کیے جانے والے شدت پسندوں میں ایک پاکستانی بھی شامل ہے۔

افغان خفیہ ادارے این ڈی ایس کا الزام ہے کہ شدت پسندوں کا یہ گروہ اتوار کو افغان پارلیمان اور نائب صدر کریم خلیلی کی رہائش گاہ پر حملے کرنے والا تھا۔

افغان حکام نے کابل کے جس رہائشی علاقے میں آپریشن کر کے حملوں کی سازش ناکام کرنے کا دعویٰ کیا ہے، وہاں کے رہائشیوں نے آپریشن کی تصدیق کی ہے۔

افغان خفیہ ادارے کے ایک اہلکار نے بی بی سی کو بتایا کہ حملہ آوروں نے دس روز قبل کابل میں ایک مکان کرائے پر لیا جہاں اُن کی تحویل سے خودکش جیکٹوں سمیت بڑی مقدار میں اسلحے اور گولہ بارود، پاکستانی نمبروں کی فہرستیں اور اہداف کے نقشے برآمد ہوئے ہیں۔