شمالی وزیرستان میں آپریشن جلد ہو گا

امریکی وزیر دفاع لیون پنیٹا نے کہا ہے کہ پاکستان افغان سرحد کے قریب قبائلی علاقے میں طالبان جنگجوؤں کے خلاف فوجی کارروائی شروع کرنے کی منصوبہ بندی کر رہا ہے جہاں القاعدہ سے جڑے حقانی نیٹ ورک کے شدت پسندوں نے محفوظ ٹھکانے بنائے ہوئے ہیں۔

امریکی خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس کے ساتھ ایک انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ پاکستانی فوج کے سربراہ جنرل اشفاق پرویز کیانی نے افغانستان میں امریکی فوج کے سینئر کمانڈر جنرل جان ایلن سے اپنے حالیہ رابطوں میں اس مجوزہ فوجی آپریشن پر بات کی ہے۔

انہوں نے کہا کہ واشنٹگن اس سے پہلے یہ امید چھوڑ چکا تھا کہ پاکستان شمالی وزیرستان میں کوئی فوجی کارروائی کرے گا۔

امریکی وزیر دفاع نے کہا کہ انہیں یہ نہیں معلوم کہ یہ فوجی کارروائی کب شروع ہوگی لیکن انہوں نے کہا کہ وہ سمجھتے ہیں کہ ایسا جلد ہی ہوگا لیکن اس کا ہدف حقانی نیٹ ورک کے بجائے پاکستانی طالبان ہوں گے۔