’مصری خاتون کو کوڑوں کی سزا رکوائی جائے‘

آخری وقت اشاعت:  ہفتہ 25 اگست 2012 ,‭ 15:18 GMT 20:18 PST

مصر کی وزارت خارجہ سے کہا گیا ہے کہ وہ سعودی عرب سے مصری خاتون کو پانچ سو کوڑے مارنے کی سزا پر عملدرآمد روکنے کا کہے۔

مصر کی ریاستی تنظیم نیشنل کونسل آف ویمن نے مصری وزیر خارجہ سے استدعا کی ہے کہ وہ سعودی عرب پر زور دیں کہ وہ ایک مصری خاتون کو دی گئی سزا پر عملدرآمد نہ کرے۔

انسانی حقوق کے اداروں کے مطابق نجلہ یحیٰ وفا کو دو ہزار نو میں اس وقت گرفتار کیا گیا تھا جب ان کے ایک سعودی شہزادی سے تجارتی اختلافات ہوئے۔

انہیں پانچ سال قید اور پانچ سو کوڑوں کی سزا دی گئی تھی۔ انسانی حقوق کے اداروں کے مطابق انہیں اب تک تین سو کوڑے مارے جا چکے ہیں۔

مصری تنظیم نے حکومت پر زور دیا ہے کہ مصری عوام کی ملک کے اندر اور باہر حفاظت کرنا حکومت کی ذمہ داری ہے۔

اسی بارے میں

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔