ارسلان کیس: نیب سے تحقیقات واپس لے لی گئیں

آخری وقت اشاعت:  جمعرات 30 اگست 2012 ,‭ 06:19 GMT 11:19 PST

سپریم کورٹ کے دو رکنی بینچ نے ارسلان افتخار نظر ثانی کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے نیب سے تحقیقات واپس لے کر ڈاکٹر شعیب سڈل کو دینے کا فیصلہ کیا ہے۔

عدالت نے ایک رکنی انکوائری کمیٹی کو تیس دن کے اندر اپنی رپورٹ مکمل کرنے کا حکم دیا ہے۔

عدالت کا کہنا تھا کہ اس کیس کی تحقیقات کے لیے شیعب سڈل کو تمام ضروری وسائل فراہم کیے جائیں گے۔

عدالت نے اس مقدے میں اٹارنی جنرل عرفان قادر کے کنڈیکٹ پر انہیں نوٹس جاری کر دیا۔

جسٹس جواد ایس خواجہ کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے دو رکنی بینچ نے جعمرات کو ارسلان افتخار کی جانب سے دائر کی جانے والی نظرثانی کی سماعت پر فیصلہ سنایا۔

اس سے پہلے عدالت نے گزشتہ سماعت کے بعد ارسلان افتخار کے وکیل سردار اسحاق اور ملک ریاض کے وکیل زاہد بخاری کے دلائل مکمل ہونے پر اس کیس کا فیصلہ منگل کو محفوظ کر لیا تھا۔

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔