’غیرملکی ادارے سے تحقیق کرالیں‘

آخری وقت اشاعت:  منگل 4 ستمبر 2012 ,‭ 19:59 GMT 00:59 PST

سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن کی سابق صدر عاصمہ جہانگیر نے کہا ہے کہ چیف جسٹس پاکستان کے بیٹے ارسلان افتخار کیس میں قومی اداروں پر اعتماد نہیں ہے تو پھر اس معاملے کی چھان بین غیر ملکی تحقیقاتی ادارے سے کرالی جائیں۔

عاصمہ جہانگیر نے یہ بات ارسلان افتخار کیس کی تحقیقات کے لیے ایک رکنی کمیشن تشکیل دینے کے فیصلے پر نکتہ چینی کرتے ہوئے کہی۔

لاہور ہائی کورٹ بار میں صحافیوں سے بات کرتے ہوئے عاصمہ جہانگیر نے کہا کہ اگر سپریم کورٹ کو قومی احتساب بیورو یعنی نیب اور ایف آئی اے کی تحقیقات پر اعتماد نہیں ہے تو پھر سکاٹ لینڈ یارڈ کی ٹیم سے تحقیقاتی کرالی جائیں۔

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔