’لوگ خوفزدہ نہ ہوں لیکن ہوشیار رہیں‘

آخری وقت اشاعت:  منگل 11 ستمبر 2012 ,‭ 00:22 GMT 05:22 PST

پاکستان میں قدرتی آفتوں سے نمٹنے کے ادارے نیشنل ڈزآسٹر منیجمینٹ اتھارٹی (این ڈی ایم اے) کے سربراہ ڈاکٹر ظفر اقبال قادر نے کہا ہے کہ بالائی سندھ اور اس سے ملحقہ بلوچستان کے نصیر آباد ڈویژن کے خطے میں معلوم شدہ تاریخ کی سب سے زیادہ بارشیں ہوئی ہیں اور یہ سلسلہ جاری ہے جس کی وجہ سے متاثرین کی صحیح تعداد کا اندازہ نہیں لگایا جاسکا ہے لیکن وہاں امدادی کارروائیاں جاری ہیں۔

انہوں نے کہا کہ کندھ کوٹ میں فوج کو بھی طلب کیا گیا ہے۔ انہوں نے جنوبی پنجاب، سندھ اور بلوچستان کے متاثرہ علاقوں کے لوگوں سے ہوشیار رہنے کی اپیل بھی کی ہے۔

ڈاکٹر ظفر اقبال قادر نے بتایا کہ جنوبی پنجاب میں کوہ سلیمان سے نکلنے والی ندی اور برساتی نالوں میں طغیانی آئی ہے اور بیشتر نالے اوور فلو کر گئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ندی نالوں میں پانی کی سطح قدرے کم تو ہوئی ہے تاہم اگلے بارہ تیرہ گھنٹے مزید بارشوں کی پیشن گوئی ہے لہذٰا خطرہ ابھی موجود ہے ۔ انہوں نے مزید بتایا کہ راجن پور کی رود کوہیاں بھر جانے سے سات دیہات زیر آب آ گئے ہیں تاہم انہوں نے شہریوں کو خوف زدہ نہ ہونے اور ہوش کے ساتھ صورتحال سے نمٹنے کی اپیل کی ہے۔

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔