مغربی کنارے سے یک طرفہ اسرائیلی انخلاء؟

آخری وقت اشاعت:  پير 24 ستمبر 2012 ,‭ 15:28 GMT 20:28 PST

اسرائیل کے وزیر دفاع ایہود باراک نے کہا ہے کہ اگر فلسطینیوں کے ساتھ بات چیت ناکام ہو جاتی ہے تو وہ مغربی کنارے سے یک طرفہ اسرائیلی انخلاء کر سکتے ہیں۔

ایک اسرائیلی اخبار کو انٹرویو میں باراک نے درجنوں اسرائیلی آبادکاروں کو وہاں سے ہٹانے کی بھی بات کی اگرچہ بعض بڑی بستیاں قائم رہیں گی۔

اسی طرح اردن کی سرحد پر فوجوں کی موجودگی کو قائم رکھا جائے گا۔

بستیوں کی تعمیرات کے اوپر اختلافات پر دو ریاستی حل کے لیے ہونے والے مذاکرات دو ہزار دس کے آخر میں رک گئے تھے۔

فلسطینی اتھارٹی کے صدر محمود عباس نے کہا کہ اسرائیل کے ساتھ براہِ راست بات چیت اس وقت تک نہیں شروع ہو گی جب تک اسرائیلی بستیوں کی تعمیر پر مکمل پابندیاں عائد نہیں کرتا ہے اور انیس سو سڑسٹھ کی جنگ بندی کی سرحد کو تسلیم نہیں کرتا۔

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔