بحرِ انٹارکٹک میں پریشان کن حد تک آلودگی

آخری وقت اشاعت:  بدھ 26 ستمبر 2012 ,‭ 11:18 GMT 16:18 PST

بحرِ انٹارکٹک میں ایک نجی تحقیقاتی مہم کے دوران سمندر میں پریشان کن حد تک پلاسٹک کے فضلے کا انکشاف ہوا ہے۔

ماحولیاتی کارکنوں کو سمندر میں ایک مربع کلومیٹر کے علاقے میں پلاسٹک پر مشتمل فضلے کے چالیس ہزار ٹکڑے ملے ہیں۔

کارکنوں کا کہنا ہے کہ یہ ایسا پلاسٹک ہے جو وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ ختم نہیں ہوتا اور سمندر میں ہزاروں برس تک موجود رہے گا اور بالاخر غذائی زنجیر میں شامل ہوجائے گا۔

ایک فرانسیسی فیشن ڈیزائنر ی مالیاتی مدد سے سرانجام دی جانے والی اس مہم کے دوران بحرِ انٹارکٹک میں سمندری مخلوقات کی پندرہ لاکھ اقسام دیکھی گئیں۔

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔