اصغر خان کیس:’اسلم بیگ اور درانی کا انفرادی فعل تھا‘

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 19 اکتوبر 2012 ,‭ 08:45 GMT 13:45 PST

سپریم کورٹ نے نوے کی دہائی میں سیاست دانوں میں رقوم کی تقسیم کے معاملے سے متعلق ائیرمارشل ریٹائرڈ اصغر خان کے مقدمے کے فیصلےسناتے ہوئے کہا ہے کہ خفیہ اداروں اور فوج کا کوئی کردار نہیں ہے۔

مختصر فیصلہ سناتے ہوئے چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری نے کہا کہ نوے کے انتخابات میں دھاندلی ہوئی ہے۔

اس مقدمہ کی سماعت چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کی سربراہی میں سپریم کورٹ کا تین رکنی بینچ نے کی۔

فیصلے میں کہا گیا ہے کہ پاکستان کی عوام کو اپنا نمائندہ منتخب کرنے کا حق حاصل ہے۔

ائیرمارشل ریٹائرڈ اصغر خان نے یہ درخواست سولہ سال قبل دائر کی تھی۔

فیصلے میں مزید کہا گیا ہے کہ پاکستانی عوام پارلیمانی جمہوری نظام کے لیے کوشاں ہے۔

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔