حکیم اللہ محسود ہی سربراہ ہیں: مولوی فقیر

آخری وقت اشاعت:  اتوار 28 اکتوبر 2012 ,‭ 17:34 GMT 22:34 PST

کالعدم تنظیم تحریک طالبان پاکستان کے ایک اہم رہنما اور باجوڑ طالبان کے کمانڈر مولوی فقیر محمد نے کہا ہے کہ ان اطلاعات میں کوئی صداقت نہیں کہ تحریک کے مرکزی امیر حکیم اللہ محسود کو تبدیل کرکے ان کی جگہ سوات طالبان کے سربراہ مولوی فضل اللہ کو امیر بنایا جا رہا ہے۔

اتوار کو بی بی سی سے کسی نامعلوم مقام سے گفتگو کرتے ہوئے مولوی فقیر محمد نے اس بات کی وضاحت کی کہ حکیم اللہ محسود کو تحریک کے مرکزی شوری نے متفقہ طورپر امیر نامزد کیا تھا لہذا ایسی اطلاعات میں کوئی حقیقت نہیں کہ ان کو تبدیل کرنے کی منصوبہ بندی ہو رہی ہے اور ان کی جگہ مولوی فضل اللہ کو تحریک کا نیا امیر بنایا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکیم اللہ محسود تحریک کے مرکزی امیر ہیں اور رہیں گے۔

یاد رہے کہ وفاقی وزیر داخلہ رحمان ملک نے ملالہ یوسف زئی پر حملے کے چند دن بعد سوات کا دورہ کیا تھا جہاں انہوں نے یہ بیان دیا تھا کہ تحریک طالبان پاکستان کے سربراہ حکیم اللہ محسود کو تبدیل کرکے ان کی جگہ فضل اللہ کو امیر بنایا جا رہا ہے۔

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔