’امریکہ کے تحفظ کے لیے ڈرون حملے ضروری‘

آخری وقت اشاعت:  ہفتہ 2 فروری 2013 ,‭ 03:25 GMT 08:25 PST

امریکی وزیرِ دفاع لیون پنیٹا کا کہنا ہے کہ امریکی سرزمین پر دہشتگردی کی ایک اور بڑی کارروائی روکنے کے لیے پاکستان اور دیگر ممالک میں القاعدہ کے شدت پسندوں کے خلاف ڈرون حملے جاری رکھنے کی ضرورت ہے۔

وزیرِ دفاع کا عہدہ چھوڑنے سے ایک دن قبل پینٹاگون میں خبر رساں ادارے اے ایف پی کو دیے گئے انٹرویو میں ان کا کہنا تھا کہ ’ڈرون طیاروں کی کارروائیاں جاری رکھنے کا تعلق اس خطرے سے ہے جس کا ہمیں سامنا ہے۔ ہم حالتِ جنگ میں ہیں۔ ہم دہشتگردی سے جنگ لڑ رہے ہیں اور یہ جنگ گیارہ ستمبر دو ہزار ایک سے جاری ہے۔‘

انہوں نے کہا کہ ڈرون آپریشنز کا مقصد ان افراد کو نشانہ بنانا ہے جنہوں نے امریکہ پر حملہ کیا اور ہزاروں افراد کو ہلاک کیا۔’میرے خیال میں یہ ہماری ذمہ داری تھی کہ ہم ہر دستیاب ٹیکنالوجی کا استعمال کر کے ان کا تعاقب کریں جنہوں نے نہ صرف وہ حملے کیے بلکہ اس ملک پر مزید حملے کرنے کی منصوبہ بندی بھی کر رہے تھے۔‘

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔