تمل قیدیوں سے جنسی زیادتی کے انکشافات

آخری وقت اشاعت:  بدھ 27 فروری 2013 ,‭ 20:14 GMT 01:14 PST

انسانی حقوق کی تنظیم ہیومن رائٹس واچ نے اپنی نئی رپورٹ میں کہا ہے کہ سری لنکا کی فوج نے تمل قیدیوں سے دوران حراست جنسی تشدد میں ملوث رہی ہے۔

اس رپورٹ میں 2006 سے 2012 کے دوران ایسے مردوں، عورتوں اور بچوں سے مبینہ جنسی زیادتیوں کے واقعات کا جائزہ لیا گیا ہے جن پر تمل ٹائیگر باغیوں سے روابط کے الزامات تھے۔

رپورٹ میں مبینہ جنسی زیادتی اور تشدد کے پچھہتر واقعات کا حوالہ دیا گیا ہے اور کہا گیا ہے کہ ان میں سے بیشتر واقعات کے طبی شواہد موجود ہیں۔

ہیومن رائٹس واچ نے سری لنکا کی حکومت سے ان معاملات کی تحقیقات کروانے کی اپیل کی ہے جبکہ سری لنکا کی حکومت نے ان الزامات کو ’جھوٹ‘ اور ’بکواس‘ قرار دیا ہے۔

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔