’حماس فلسطینیوں کی ہلاکت کی تحقیقات میں ناکام‘

انسانی حقوق کی امریکی تنظیم ہیومن رائٹس واچ نے غزہ میں حماس کی حکومت پر اسرائیل کے لیے جاسوسی کے سات ملزمان کی ہلاکت کی تحقیقات میں ناکامی کا الزام عائد کیا ہے۔

یہ واقعہ گزشتہ برس نومبر میں حماس اور اسرائیل کی آٹھ روزہ جنگ کے دوران پیش آیا تھا اور ان افراد کو سرِعام گولی مار دی گئی تھی جبکہ ایک شخص کی لاش کو موٹرسائیکل سے باندھ کر گھسیٹا گیا تھا۔

ہیومن رائٹس واچ کا کہنا ہے کہ ان ہلاکتوں کی تحقیقات کا جو وعدہ کیا گیا تھا وہ پورا نہیں ہوا ہے تاہم حماس نے اس کی تردید کی ہے۔

ان افراد کو غزہ میں ایک فوجی عدالت نے اسرائیل کے لیے جاسوسی کا مجرم قرار دیا تھا تاہم اس کے بعد مسلح افراد نے انہیں سرکاری تحویل سے چھڑوا لیا تھا۔

ایچ آر ڈبلیو کا یہ بھی کہنا ہے کہ ان افراد سے مبینہ طور پر تشدد کے ذریعے اقبالِ جرم کروایا گیا تھا۔