مشرف کو عدالتی ریمانڈ پر جیل بھیجنے کا حکم

راولپنڈی کی انسداد دہشت گردی کی عدالت نے سابق فوجی صدر پرویز مشرف کو پاکستان پیپلز پارٹی کی چیئرپرسن بےنظیر بھٹو کے قتل کے مقدمے میں چودہ دن کے عدالتی ریمانڈ پر جیل بھیجنے کا حکم دیا ہے۔

پرویز مشرف کو اس مقدمے میں چار روزہ جسمانی ریمانڈ کے خاتمے پر منگل کو عدالت میں پیش کیا جانا تھا تاہم سکیورٹی خدشات کی وجہ سے انہیں عدالت نہ لانے کا فیصلہ کیا گیا۔

سماعت کے دوران مقدمے کے تفتیشی افسر نے جج حبیب الرحمٰن کو بتایا کہ سابق صدر سے بینظیر بھٹو کے قتل کے مقدمے میں تحقیقات مکمل کر لی ہیں اور وہ اب مزید تفتیش کے لیے ایف آئی اے کو مطلوب نہیں اور انہیں جیل بھیج دیا جائے۔

اس پر عدالت نے چودہ روزہ عدالتی ریمانڈ پر جیل بھیج دیا۔ پرویز مشرف کو تیرہ مئی کو دوبارہ عدالت میں پیش کیا جائے گا۔