’افغانستان میں کامیابی دیرپا ہو گی کہنا مشکل‘

افغانستان میں نیٹو فورسز کے کمانڈر نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ افغانستان میں اہم پیش رفت ہوئی ہے لیکن یہ نہیں کہا جاسکتا کہ یہ کامیابی دیر پا ہوگی۔

فروری میں اپنا عہدہ سنبھالنے کے بعد اپنے پہلے انٹرویو میں جنرل جوزف ڈینفورڈ کا کہنا تھا کہ سنہ دو ہزار چودہ میں افغانستان سے فوجوں کے انخلاء کے بعد جمہوریت اور خواتین کے حقوق جیسی بنیادی کامیابیوں کو قائم رکھنے کے لیے ضروری ہے کہ بین الاقوامی برادری دباؤ برقرار رکھے۔

جنرل جان ایلن کے بعد افغانستان میں نیٹو فورسز کے سربراہ کا عہدہ سنبھالنے والے جنرل ڈنفورڈ کا کہنا ہے کہ طالبان سے بات چیت ایک مشکل مرحلہ تھا۔